Home / دلچسپ و عجیب / رات گئے مشکوک سرگرمیاں؟ ڈاکٹر عامر لیاقت سے کون، کون ملنے آیا؟ ڈرائیور کس حالت کیسی ہے؟ موت کے بعد تہلکہ خیز انکشافات

رات گئے مشکوک سرگرمیاں؟ ڈاکٹر عامر لیاقت سے کون، کون ملنے آیا؟ ڈرائیور کس حالت کیسی ہے؟ موت کے بعد تہلکہ خیز انکشافات

پاکستان تحریک انصاف کے منحرف رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین جمعرات کو کراچی میں49برس

کی عمر میں انتقال کر گئے، اسپتال منتقلی کے بعد ڈاکٹرز نے ان کی موت کی تصدیق کردی۔ اس حوالے سے ان کے

پڑوسی جمشید قاضی نے کہا ہے کہ میں یہ ڈاکٹر صاحب کا روم ہے کہ جنریٹر کی گیس ایسی تھی کہ صبح سے ایسا کچھ مشکوک معلوم ہو رہا تھا کہ

عامر لیاقت کیلئے کوئی وینٹی لیشن یہاں پر نہیں ہے وہاں پر لوگ آئے تو شو ر کرنے لگے کہ ڈاکٹر کی صحت صحیح نہیں ہے ، انہیں یہاں سے لے جایا گیا مجھے لگتا ہے کہ اسی وقت فوت ہو چکے تھے ۔ جمشید قاضی کا کہنا تھا کہ گھر میں ایک ان کا ملازم جاوید تھا

ایک ان کا ڈرائیور ممتاز ہےان کی طبعیت صحیح نہیں تھی ۔ ان سے لوگ ملنے آتے رہتے تھے کیونکہ وہ ایک سیاسی وسماجی شخصیت تھیں ۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کے منحرف

رکن قومی اسمبلی عامر لیاقت حسین کراچی میں49برس کی عمر میں انتقال کر گئے، اسپتال منتقلی کے بعد ڈاکٹرز نے ان کی موت کی تصدیق کردی۔جمعرات کی صبح عامر لیاقت حسین کو تشویشناک حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں ڈاکٹرز نے معائنے کے بعد انتقال کی تصدیق کی، جبکہ ان کے ڈرائیور جاوید نے پہلے ہی موت کی تصدیق کردی تھی۔ڈاکٹرز کے مطابق عامر لیاقت حسین کو جب اسپتال لایا گیا تو وہ انتقال کر چکے تھے۔ڈرائیور جاوید کے مطابق گھر میں عامر لیاقت کے کمرے کا دروازہ کھٹکھٹایا گیا تاہم اندر سے کوئی جواب موصول نہیں ہوا۔عامر لیاقت حسین اپنے آبائی گھر خداداد کالونی میں موجود تھے، گھر پر موجود ملازمین دروازہ کھول کر اندر گئے تو وہ بے ہوش حالت میں بستر پر موجود تھے جس کے فوری بعد انہیں اسپتال منتقل کیا گیا۔

عامر لیاقت کے ڈرائیور جاوید نے 15 پر عامر لیاقت کی طبیعت کے حوالے سے اطلاع دی تھی۔ملازم جاوید نے بتایا کہ گزشتہ شب عامر لیاقت نے سینے میں درد کی شکایت بھی کی تھی جس پر انہیں اسپتال چلنے کا کہا گیا تاہم انہوں نے انکار کردیا اور پھر صبح ان کے کمرے سے چیخنے کی آواز بھی سنائی دی تھی۔

ان کے ملازم نے بتایا کہ وہ گزشتہ رات ملک چھوڑنے کی تیاری کررہے تھے جبکہ اس دوران بہت روئے جس کے باعث ان کی طبیعت بگڑ گئی۔ملازم نے بتایا کہ

جب سے دانیہ شاہ سے ان کے معاملات خراب ہوئے تھے وہ ہروقت ٹینشن میں رہتے تھے،

شدید ڈپریشن کا شکار تھے جس کے باعث ان کی طبیعت بہت زیادہ ناساز تھی۔ایس ایس پی ایسٹ رحیم شیرازی نے عامر لیاقت حسین کے گھر کا معائنہ کیا ہے،فرانزک عملہ سمیت دیگر تحقیقاتی حکام نے بھی گھر کا معائنہ اور شواہد جمع کئے۔رحیم شیرازی نے بتایا کہ تقریبا دوپہر ایک بجے کے قریب عامر لیاقت کے حوالے سے اطلاع ملی، اہلخانہ سے رابطہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ایس ایس پی ایسٹ نے بتایا کہ عامر لیاقت کے ساتھ ان کے دو ملازم رہتے تھے، ہمیں عامر لیاقت سے متعلق ان کے ملازم نے اطلاع دی۔پولیس حکام کے مطابق کرائم سین یونٹ کو گھر پر طلب کیا گیا،جہاں انہوں نے مختلف شواہد اکٹھے کیئے۔ایس ایس پی ایسٹ کے مطابق عامر لیاقت کے گھر اِس وقت ان کے خاندان کا کوئی شخص موجود نہیں تھا۔انہوں نے کہا کہ عامر لیاقت حسین کی وجہ موت جاننا ضروری ہے،

مختلف پہلوئوں سے تفتیش شروع کردی گئی ہے، پوسٹ مارٹم رپورٹ سے کافی چیزیں کلیئر ہوجائیں گی۔عامرلیاقت نے ایک زور قبل ٹوئٹر پر صافی حمزہ اظہر سلام کی ٹویٹ ری پوسٹ کی تھی جس میں لکھا تھا کہ عامر لیاقت عمرے کے بعد نا معلوم جگہ منتقل ہوجائیں گے۔واضح رہے کہ عامر لیاقت حسین گزشتہ کچھ عرصے سے نجی زندگی میں شدید مسائل سے دوچار تھے

اور ان کی تیسری شادی کا اختتام بھی طلاق پر ہوا تھا۔عامر لیاقت نے پہلی شادی ڈاکٹر بشری سے کی تھیں، جس سے ان کے دو نوجوان بچے بھی ہیں، جن کی عمریں 20 سال سے زائد ہیں۔ڈاکٹر بشری اقبال نے دسمبر 2020 میں تصدیق کی تھی کہ شوہر نے انہیں طلاق دے دی۔

عامر لیاقت نے دوسری شادی ماڈل و اداکارہ طوبی انور سے جولائی 2018 میں کی تھی جو ان سے کئی سال کم عمر تھیں اور دونوں کی شادی 4 سال سے بھی کم عرصے تک چلی۔گزشتہ سال فروری میں طوبی انور نے تصدیق کی تھی کہ انہوں نے عامر لیاقت سے خلع لے لی ہے تاہم عامر لیاقت مسلسل اس کی تردید کرتے رہے۔

About admin

Check Also

نازیبا ویڈیو کے دعوے اور کردار کشی مہم، اداکارہ سجل علی نے بیان جاری کردیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستانی اداکارہ سجل علی نے سوشل میڈیا پر ان سمیت دیگر اداکاراؤں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com